Our _Blog_

Our Daily News

نیو اسلام آباد ایئر پورٹ کے تیسرے رن وے کیلئے 1481 ایکٹر اراضی مزید حاصل کی جائے گی

Further 1481 hector land acquired for New Islamabad airport 3rd runway

some image some image

راولپنڈی(نمائندہ پوٹھوار ڈاٹ کوم)----   نیو اسلام آباد ایئر پورٹ کے تیسرے رن وے کیلئے 1481 ایکٹر اراضی مزید ایکوائر ہوگی۔باخبر ذرائع کے مطابق ایئر پورٹ کے تیسرے رن وے کیلئے تین جگہوں کی تجاویز تیار کی جارہی ہیں۔جس کی حتمی منظوری وزیر اعظم سے لی جائے گی۔ذرائع کے مطابق ایک تجویز ہے کہ تیسرے رن وے کیلئے موجودہ ایئر پورٹ کے عقب میں فتح جنگ کی طرف رخ رکھا جائے۔

دوسری تجویز کے تحت اس کو موجودہ ایئر پورٹ کے درمیان جبکہ تیسری تجویز کے تحت اس کا رخ مشرقی سائیڈ راولپنڈی کی طرف کرنے پر غور کیا جارہاہے۔جس میں ایک نجی ہائوسنگ سوسائٹی کی اراضی بھی شامل ہوگی۔

ذرائع کے مطابق نیو اسلام آباد ایئر پورٹ کے تیسرے رن وے کے حوالے سے میٹنگز جاری ہیں۔جمعرات کو بھی اجلاس ہواجس میں راولپنڈی اور اٹک کے حکام نے بھی شرکت کی۔اجلاس میں تینوں تجاویز پر غور ہوا ۔

تینوں تجاویز میں مزید زمین کی ایکوزیشن ہونی ہے۔ راولپنڈی کی طرف رخ پر زیادہ ایکوزیشن ہوگی۔جو1481ایکٹر تک ہوسکتی ہے۔تینوں تجاویز کے حوالے سے وزیر اعظم کو بریفنگ دی جائے گی ۔حتمی تجویز کی منظوری وزیر اعظم دینگے۔ذرائع کے مطابق زیادہ امکان ہے کہ تیسرے رن وے کیلئے راولپنڈی سائیڈ کی منظوری دی جائے گی۔

Rawalpindi; Further 1481 hector land acquired for New Islamabad airport 3rd runway, Which will be one the largest airport in The world and situated in Pothwar region. According to informed sources, three places are being lined up for for the third runway of the airport. The final link will be approved by the Prime Minister.

According to some sources, one suggestion is to turn towards Fateh Jhang. According to the second proposal, it is being discussed between the current airport and the third option is towards the direction of East Side Rawalpindi under the third proposal. It will also include the area of private housing society.

According to sources, the meetings were held regarding the third runway of the new Islamabad airport. The meeting was attended by the Rawalpindi and Atak authorities in the meeting. The three suggestions were discussed in the society.

Sources said that Rawalpindi side will be approved for third runway, Which will be approved by the Prime Minister. Islamabad International Airport is an international airport for Islamabad-Rawalpindi metropolitan area currently under construction. The airport is expected to open for commercial flights in December 2017. The airport project was conceived initially in 1984 for which the acquisition of land in Attock started the same year. Build around 20 km west of the twin cities, it is being built to replace the existing Benazir Bhutto Airport.

گارڈن سٹی بحریہ ٹاؤن راولپنڈی میں ایک بڑا فراڈ، پلاٹ مالکان سے پوچھے بغیر ڈی ایچ اے کو فروخت

Bahria owner Malik Riaz resold plots land without owners knowledge to DHA

some image

بیول (نمائندہ پوٹھوار ڈاٹ کوم،وقا ص الرحمن وارثی)۔۔۔۔گارڈن سٹی بحریہ ٹاؤن راولپنڈی میں ایک بڑا فراڈ ،بحریہ ٹاؤن کے چیئرمین ملک ریاض نے گارڈن سٹی راولپنڈی کے الاٹیوں کے ساتھ ایک بار پھر بہت بڑا فراڈ کر دیا ،تفصیلات کے مطابق ملک ریاض نے تقریبا چار سال قبل گارڈ ن سٹی کے پلاٹ انتہائی مہنگے داموں لوگوں کو فروخت کیے تھے جن پر کئی پلاٹوں پر مکان بھی تعمیر ہوچکے ہیں

لیکن جن لوگوں نے اپنے پلاٹوں پر مکان تعمیر نہیں کیے تھے اُن کے پلاٹ ملک ریاض نے پلاٹوں کے مالکان سے پوچھے بغیر ڈی ایچ اے کو فروخت کر دیئے ہیں اور اب جو لوگ اپنے پلاٹوں کا قبضہ لینے جاتے ہیں وہاں اُن پر بحریہ ٹاؤن کے مسلح گارڈ تشدد کرتے ہیں اور لوگوں کے پلاٹ کے بدلے پانچ سال بعد رقم واپس لینے کا کہا جارہا ہے

لہذا مافیا کا ڈان اس سے پہلے بھی ڈی ایچ اے ویلی اور بحریہ انکلیو اسلام آباد میں لوگوں کے ساتھ فراڈ کر چکا ہے گارڈن سٹی کے متاثرین نے چیف جسٹس سے اپیل کرتے ہیں کہ وہ اس معاملے پر از خود نوٹس لے کر ہزاروں لوگوں کو اس مافیا سے نجات دلائیں اور ملک ریاض کو یہ زمین ڈی ایچ اے کو منتقل کرنے سے روکیں۔

Islamabad; The plot owners at Garden city, Bahria Town in Islamabad are left furious as the Malik Riaz owner of the Bahria sold the land to DHA without the knowledge or approval of the plot owners who had bought the plots from him as Bahria project.

Bahria Town launched Garden City back in 2013 on a two-year payment plan. The prices of the plots were high since Bahria claimed that the project has been fully developed and the property owners can start construction of their homes in Garden City right away. In 2015, without any proper announcement, Bahria Town handed over Garden City to DHA as a compensation to DHA Valley, for which it received several billions from the DHA. By then, Bahria Town had also received full payments for these plots in Garden City.

Initially, the property owners were told that with DHA taking over Garden City, property rates here will spike. Shortly after DHA erected “Serene City” board by removing Garden City’s board, property transfer office here was also shut down for an indefinite period. The latest update in this regard is that property owners, who have reached an approximate number of 5,000, have been asked by Bahria Town to submit PKR 3,500,000 in terms of development charges.

Currently the plot owners are being told that they will be paid back amount paid for plots in five years, which has left the plot owners furious and being defrauded. The Chief justice is being asked to take notice.

محکمہ کسٹمز کا جی پی او پر چھاپہ۔برطانیہ کے لیے بک کرائے گئے پارسلز میں سے دو کلوگرام ہیروئن برآمد

Customs International Mail Office at GPO Islamabad seized 2 kilogram of heroin from parcel addressed to UK

some image some image

سلام آباد ( نمائندہ پوٹھوار ڈاٹ کوم ، راجہ طیب ) ۔۔۔ محکمہ کسٹمز کا جی پی او پر چھاپہ۔برطانیہ کے لیے بک کرائے گئے پارسلز میں سے دو کلوگرام ہیروئن برآمد۔پارسلز پر ای ایٹ کا پتہ اور کاشف شہزار نامی شخص کا نام درج ہے۔دونوں پارسلز دو مختلف پتوں پر برطانیہ بھجوائے جا رہے تھے۔کسٹمز نے ملزم کی تلاش کے لیے ٹیمیں تشکیل دے دی۔ کسٹمز حکام کے مطابق دونوں پارسلز کا کل وزن 17 اعشاریہ 5 کلوگرام ہے۔

کسٹم حکام کا کہنا تھا کہ پکڑی گئی ہیروئن کی مالیت بیس ملین سے زائد ہے اور چونکہ ائرپورٹ پر سونگھنے والے کتوں کی مدد سے سخت چیکنگ کی جاتی ہے تو اسی لئے مجرموں نے اب دوسرا راستہ اختیار کرنا شروع کر دیا ہے۔کسٹم آفیسر کا کہنا تھا کہ وہ روٹین کی چیکنگ کر رہے تھے کہ انھیں مذکورہ پیکٹ پر شبہ ہوا اعلٰی حکام کی اجازت کے بعد جب انھوں نے پیکٹ کھولا تو ان کے شبے کی تصدیق ہو گئی۔

گنرل پوسٹ آفس اسلام آباد سے مذکورہ پارسل برطانیہ کے لئے بک کروایا گیا یہ ہیروئن دو الگ الگ پارسلز میں بند کی گئی اور انھیں انتہائی مہارت سے پیپر کے ڈبوں میں بند کیا گیا تھا۔ برطانیہ کے لئے دو الگ الگ پتوں کا انتخاب کیا گیا تھا۔

ISLAMABAD: Customs International Mail Office (IMO)at GPO Islamabad seized 2 kilogram of fine quality heroin from parcel concealed in layers of a cartoon made by paper, the heroin was shipped for United Kingdom (UK), and the IMO doing raids for arrest of the criminal involve in above said seize, the worth of seized 02 kilogram of heroin was estimated Rs.20 million.

Collector Dr. Arslan told that during routine checking the team of customs department under the supervision Inspector Shabbir found a suspicious parcel (carton) and informed the assistant collector IMO about it, after getting permission the inspector open the parcel and found the fine quality of heroin which was tactfully concealed in paper carton.

The Collector said that the seized heroin consignment was booked from GPO Islamabad and was shipped to UK. He said that under following the orders of Member Customs Zahid Kokhar the collector Islamabad had taken tight rummaging and checking measures by sniffing dogs at Islamabad Air port the Heroin Smugglers tried to send their consignments via IMO Islamabad.

مو ٹر سا ئیکل سو ا ر و ں نے ر ا و لپنڈ ی و یسٹ مینجمنٹ کمپنی کے ا ہلکا ر و ں کو نشا نہ بنا یا د و مقا ما ت پر فا ئر نگ سے د و ا ہلکا ر جا ن بحق

Armed men on motorbikes murderrd two waste management workers

some image

کلر سیداں، اکرام الحق قریشی، نمائندہ پوٹھوار ڈاٹ کوم ۔۔۔۔۔۔۔ر ا و لپنڈ ی شہر میں د ہشت گر دی کا و ا قعہ مو ٹر سا ئیکل سو ا ر و ں نے ر ا و لپنڈ ی و یسٹ مینجمنٹ کمپنی کے ا ہلکا ر و ں کو نشا نہ بنا یا د و مقا ما ت پر فا ئر نگ سے د و ا ہلکا ر جا ن بحق ہو گئے ہلا ک ہو نے و ا لو ں کا تعلق کر سچن کمیو نٹی سے تھا

یہ و ا قعہ جمعہ کی صبح 5-30بجے پیش آ یا ملز مان نے ڈ ھو ک کھبہ میں فا ئر نگ کی جس پر ا ہلکا ر بھا گ نکلے ا و ر محفو ظ ر ہے

ملز ما ن نے بعد ا ز ا ں بے نظیر بھٹو ہسپتا ل کے قر یب مو ٹر سا ئیکل پر سو ا ر ڈ یو ٹی پر جا نے و ا لے ا ہلکا ر و ں پر ا ند ھا د ھند فا ئر نگ کی جس سے د و ا ہلکا ر کر ا مت ا و ر صغیر ہلا ک ہو گئے ا و ر ملز ما ن فر ا ر ہو گئے ۔

Rawalpindi; Two employees of a Turkish waste management firm Albayrack were shot near Data Ganj Baksh Road in Rawalpindi. The incident took place at 5.30am, while the workers were sweeping the road. The 40-year-old Karamat was killed from a gunshot wound to his neck while Sagheer, 38, who was shot four times in his upper body, was still in critical condition.

According to eyewitnesses, two unidentified men drove by on a motorbike, firing indiscriminately, which led the bystanders to run for cover, including a third employee of Albayrack who was present on the scene. Karamat's body was shifted to District Headquarters Hospital for an autopsy and was later taken to his family home Sheikhupura. The autopsy report has not been released. Sagheer has been admitted in Benazir Hospital.

Police have termed the murders as targeted killing and claimed that the attack seems pre-planned. A similar incident had taken place in June in the same area, where another employee of Albayrack, Aashir Asif was murdered by unknown men in the early hours of the morning. All of the employees that were shot belonged to the Christian community.

Albayrack employees said that none of the company officials visited the injured workers for hours after the incident.

سپریم کورٹ نے پاناما کیس کا فیصلہ سناتے ہوئے نوازشریف کو نااہل قرار دے دیا۔

Pakistan Prime Minister Nawaz Sharif resigns after Supreme Court ruling

some image

لندن، پوٹھوار ڈاٹ کوم ،محمد نصیر راجہ۔۔۔۔ پاکستان کی سپریم کورٹ نے پاناما کیس کا فیصلہ سناتے ہوئے وزیر اعظم پاکستان کو نا اہل قرار دے دیا ہے جس کے بعد انھوں نے وزیر اعظم کے عہدے سے استعفی دے دیا۔ جمعرات کی رات سے ہی پاناما لیکس کے مقدمے کا فیصلہ سوشل میڈیا پر ایک گرما گرم موضوع بنا رہا۔ جبکہ جمعے کی صبح عدالتی فیصلے کے بعد پاکستانی سوشل میڈیا میں پاناما ورڈکٹ، نواز شریف، گون نواز گون، پاناما پیپرز اور ایسے ہی دیگر موضوعات ٹرینڈ کرتے رہے۔

اس کے علاوہ عالمی سطح پر بھی پاناما ورڈکٹ سرفہرست کا ٹرینڈ تھا جبکہ ترک زبان میں 'وزیراعظم نواز شریف' بھی عالمی سطح پر ٹرینڈ کر رہا ہے۔ پاکستان تحریک انصاف کے چیئرمین عمران خان کی سابقہ بیوی جمائما خان نے ٹویٹ کیا کہپ 'گون نواز گون' یعنی 'نواز گیا'

مریم نے ٹویٹ کیا کہ 'پیاری دنیا، مجھے پاکستان پر فخر ہے کہ یہاں کے وزیراعظم کو بدعنوانی کے الزام میں نااہل قرار دیا گیا ہے .... یہ ایک نئے پاکستان کا آغاز ہے۔' شاہ زیب جیلانی نے لکھا کہ 'یہ معاملہ بدعنوانی کا کم اور ذمہ داری کا زیادہ ہے۔ یہ ہمیں یاد دلاتا ہے کہ پاکستان پر حکومت کرنے والا سیاسی طبقے کیسا ہے۔' ندرت خواجہ کا کہنا تھا کہ 'پاکستان کی تاریخ: فوجی سے عدالتی بغاوت تک'

انڈیا کے سوشل میڈیا پر بھی اسی پر بحث چل رہی ہے اور بہت سے لوگ اس پر بات کر رہے ہیں. اس موضوع پر انڈین سیاسی جماعت کانگریس کے سینیئر رہنما دگ وجے سنگھ نے لکھا کہ 'پاکستان کے وزیراعظم نواز شریف کو سپریم کورٹ نے نااہل قرار دے دیا ہے۔ وزیراعظم صاحب ہمارے یہاں کے پاناما پیپرز میں جنھیں مجرم بتایا گیا ہے ان کا کیا بنا؟' انیل نے لکھا کہ 'پاکستان کی سپريم کورٹ کی عزت کرتا ہوں، انھوں نے وزیر اعظم کو استعفیٰ دینے پر مجبور کر دیا۔' نونیت مندرا نے لکھا کہ 'یہ افسوسناک ہے۔ اس طرح کا کچھ کبھی انڈیا میں ہوگا اس کی مجھے امید بھی نہیں ہے! موجودہ وزیر اعظم کو نااہل قرار دینا .... پاکستان سپریم کورٹ کو سلام ہے۔'

London; Pakistan Prime Minister Nawaz Sharif has resigned from his post, his office has said. The resignation comes hours after the country’s Supreme Court disqualified him over corruption claims against his family’s wealth.

The court said Mr Sharif was not fit to hold office and ordered a criminal investigation into him and his family after they could not account for the Sharifs’ vast wealth. A spokesman for Mr Sharif said the premier had stepped down despite having reservations about the court order.

The statement claimed justice had not been done, but the Prime Minister stepped down to show his respect for the judiciary and rule of law.

The verdict, delivered by a five-member supreme court, comes after the Panama Papers leak documented the involvement of Mr Sharif’s children in the purchase of high-end London properties through offshore companies.

چکری انٹر چینج پر مسافر وین اور ٹرالر میں تصادم،آتشزدگی میں 13 افراد جاں بحق

Fatal accident at Chakri interchange, 13 people killed

some image some image

راولپنڈی ( نمائندہ پوٹھوار ڈاٹ کوم ، راجہ طیب)۔۔۔۔ چکری انٹر چینج پر مسافر وین اور ٹرالر میں تصادم،آتشزدگی میں 13 افراد جاں بحق ہو گئے۔جاں بحق ہونے والوں میں 3 بچے بھی شامل ہیں۔فائر بریگیڈ کے عملے نے موقع پر پہنچ کر آگ پر قابو پالیا تاہم اس وقت تک گاڑی میں سوار تمام مسافر جھلس چکے تھے جنھیں اسلام آباد کے پمز ہسپتال منتقل کیا گیا۔

حادثے کے نتیجے میں6 مسافر زخمی بھی ہوئے۔ زخمیوں میں سے شدید زخمی دو خواتین کو سی ایم ایچ راولپنڈی منتقل کر دیا گیاہے۔ترجمان موٹروے پولیس کے مطابق حادثہ ہائی ایس کے ڈرئیوار کے سو جانے کی وجہ سے پیش آیا۔

پولیس کے مطابق حادثے میں جاں بحق ہونے والے مسافروں کی لاشیں نا قابل شناخت ہیں جس کے لیے ان کے ڈی این اے ٹیسٹ کرائے جائیں گے۔ موٹروے پولیس کے ترجمان کا کہنا تھا کہ ہائی ایس وین میں سی این جی سلنڈروں کی وجہ سے آگ لگی اور اتنی بڑی تعداد میں جانیں ضائع ہوئیں۔ ڈرائیور کا نام آصف بتایا جا رہا ہے۔پمز اسپتال سے ڈی این اے نہ ہونے کے باعث سی ایم ایچ سے لاشوں کے ٹیسٹ کروانے کے لئے رابطہ کر رہے ہیں۔

Rawalpindi; At least 13 people died due to a collision between passenger van and a truck on motorway near Charki interchange, Rawalpindi.

According to details, after the accident, van caught fire resulting in deaths. The fire was however doused by fire brigade which reached at site along with Motorway police.

The van was going from Jhang to Rawalpindi, National Highway Authority spokesperson stated. The identities of dead are yet to be checked.

Meanwhile, Punjab Chief Minister has expressed his grief our the loss of lives and ordered to authorities to take immediate action on it.

تہرے قتل کے ملزمان گرفتار نہ کرنے پر تھانہ روات کے خلاف مشتعل افراد کی نعرہ بازی ، ٹائر جلا کر جی ٹی روڈ 3 گھنٹے کیلئے بلاک

Protest held against Rawat police over triple murder failure inquest

some image

روات(چوہدری عقیل احمد نمائندہ پوٹھوار ڈاٹ کام)۔۔۔۔ تھانہ روات کے علاقہ جھمٹ میں تہرے قتل کی واردات کے ملزمان گرفتار نہ کرنے پر اہلیان علاقہ ڈی ایس پی صدر سرکل اور مقامی پولیس کے خلاف مشتعل ،نعرہ بازی کرتے ہوئے ٹائر جلا کر جی ٹی روڈ 3 گھنٹے کیلئے بلاک کر دی ایس پی صدر سرکل اور ڈی ایس پی صدر کے موقع پر پہنچنے پر سینکڑوں مظاہرین کی متعلقہ افسران کے خلاف شدید نعرہ بازی ،قاتلوں کی فوری گرفتاری کا مطالبہ

تفصیلات کے مطابق 12 دن قبل تھانہ روات کے علاقہ جھمٹ یو سی ساگری میں نامعلوم سفاک قاتلوں نے گھر کے اندر گھس کر ماں ،بیٹی اور کم سن 7 سالہ نواسی کو تیز دھار آلہ سے زبح کر دیا اور فرار ہو گئے جس پر روات پولیس نے نامعلوم قاتلوں کے خلاف مقدمہ درج کر کے تفتیش متعلقہ برانچ ایچ آئی یو کے سب انسپکٹر احمد نواز کے سپرد کر دی

مگر پولیس نے ملزمان کی گرفتاری کی بجائے مقدمہ کو کمائی کا ذریعہ بنا لیا جس پر گزشتہ روز مقامی راہنماؤں مرزا خاور رزاق ،اشتیاق احمد ،عادل محمود ،محمد ابراہیم ،آزاد حسین ،دلاور خان کی قیادت میں سینکڑوں معززین مقامی پولیس اور ڈی ایس پی صدر سرکل سلیم خٹک کے خلاف شدید نعرہ بازی کرتے ہوئے جی ٹی روڈ پر آگئے اور جی ٹی روڈ بلاک کر کے قاتلوں کی گرفتاری تک روڈ نہ کھولنے کا اعلان کر دیا

تاہم بعد ازاں ایس پی صدر راولپنڈی افتخار الحق نے مظاہرین کے ساتھ مذاکرات کر کے انھیں ملزمان کی گرفتاری کی یقین دہانی کروا کر روڈ ٹریفک کیلئے بحال کروا دیا ۔اجب مقدمہ کے تفتیشی سب انسپکٹر احمد نواز سے رابطہ کیا گیا تو موصوف نے بتایا کہ ساجد حسین نامی شخص ہماری تحویل میں ہے تفتیش کے بعد بہت جلد قاتل گرفتار کر لیں گئے ۔

Rawat; Hundreds of people protested against Rawat police over failure to make arrest on triple murder, Tyres were burnt and slogans against police were shouted as the main GT road was blocked.

In village of Jhamat in Rawat a mother along with her daughter and grand daughter were brutally murdered and the killers fled, The police were informed but nothing had happened in order to arrest the killers.

Hundreds of people gathered in Rawat and protested, the protestors wanted immediate arrest of the men responsible for horrific murder and removal of investigating officer, The Police negotiated with protestors and have promised to arrest the killers.

The main GT road which had been blocked for three hours was opened after police successfully negotiated with protestors.

کلر سیداں روات روڈ پر ڈکیتی کی واردات میں نامعلوم ڈاکوؤں نے اسلحہ کی نوک پر برطانوی پلٹ فیملی کو لوٹ لیا

برطانوی فیملی کا تعلق ڈڈیال کے نواحی علاقے چانہ سے تھا

British Pakistani family have been roabbed at gun point near Sagri on Kallar road

some image

کلر سیداں؛ نمائندہ پوٹھوارڈاٹ کام ،اکرام الحق قریشی۔۔۔۔ کلر سیداں روات روڈ پر ڈکیتی کی واردات میں نامعلوم ڈاکوؤں نے اسلحہ کی نوک پر برطانوی پلٹ فیملی کو لوٹ لیا اور موقع سے فرار ہو جانے میں کامیاب ہو گئے ۔برطانوی فیملی کا تعلق ڈڈیال کے نواحی علاقے چانہ سے تھا۔واردات کی اطلاع تھانہ روات پولیس کو دے دی گئی ہے۔اہل خانہ کے مطابق پولیس حدود کے بہانے بناتی رہی۔ ٹیکسی ڈرائیور وقاص حسین سکنہ ڈڈیال نے بتایا کہ وہ برطانیہ سے آنے والی فیملی کو اسلام آباد آئیر پورٹ سے لے کر کلر سیداں کے راستے اپنے آبائی گاؤں ٹوٹہ شیر داخلی ڈڈیال آزاد کشمیر جا رہا تھا کہ اتوار کی صبح تین بجے کے قریب کلر سیداں روات روڈ پر ساگری موڑ کے قریب پیچھے سے آنے والی تیز رفتار کار نے ہمیں اوور ٹیک کرتے ہوئے رکنے کا اشارہ کیا۔

گاڑی روکنے کے بعد دو ملزمان جن کے ہاتھوں میں آتشیں اسلحہ تھا نے ہمیں گاڑی سے باہر نکال لیا اور تلاشی کے دوران حاجی عبدالحبیب سے ساڑھے چھ ہزار مالیت کے برطانوی پونڈز،دو برٹش اور ایک پاکستانی پاسپورٹس،اوور سیز کارڈز،آئی فون سیون پلس،منی آئی پیڈ اورویزا کارڈ چھین لیا جبکہ گاڑی میں بیٹھی ہوئی حاجی عبدالحبیب کی بہو کے کانوں اور کلائیوں میں پہنے ہوئے طلائی زیورات اتروا لئے ان کے بیٹے اور سات سالہ پوتے کو ہراساں کیا اور ٹیکسی نمبری ایل آر ایم 0753 کی چابی اپنے ساتھ لے کر فرار ہو گئے۔ڈرائیور کے مطابق اس کی جیب میں چار ہزار روپے کی نقدی،اے ٹی ایم کارڈ،شناختی کارڈ اور ڈرائیونگ لائسنس بھی تھا جو ساتھ لے گئے ہیں۔

روات(چوہدری عقیل احمد نمائندہ پوٹھوار ڈاٹ کام)۔۔۔۔تھانہ روات کے علاقہ میں کار سوار ڈاکوؤں نے پولیس کا روپ دھار کر ایک اور لندن پلٹ فیملی کو یرغمال بنا کر لاکھوں روپے غیر ملکی کرنسی ،طلائی زیورات اور موبائیل فون چھین لئیے ڈکیتی کی واردات کے بعد ڈاکو باآسانی فرار تفصیلات کے مطابق گزشتہ روز علی الصبح ڈڈیال آزادکشمیر کے رہائشی حاجی حبیب کی فیملی اسلام آباد اےئرپورٹ سے اپنی کار نمبریLRMo753 پر سوار ہو کر گھر کی طرف روانہ ہوئے تو اس دوران روات کلر روڈ پر واقع ساگری سٹاپ کے قریب پیچھے سے آنیوالی کار میں سوار ڈاکوؤں نے انھیں روک لیا اور اپنے آپ کو پولیس اہلکار ظاہر کر کے اسلحہ دکھا کر نقدی مبلغ 6500 پاؤنڈ ،لاکھوں روپے مالیت کے طلائی زیورات اور قیمتی موبائیل فون چھین کر فرار ہو گئے متاثرین نے واقعہ کے متعلق تھانہ روات تحریری درخواست دے دی مگر رات گئے تک مقدمہ کا اندراج نہ ہو سکا عوام علاقہ نے بڑھتی وارداتوں پر شدید احتجاج کرتے ہوئے آر پی او راولپنڈی اور سی پی او راولپنڈی سے تارکین وطن کے تحفظ کی اپیل کی ہے ۔

Kallar Seydan - Rawat - A British Pakistani family have been robbed on gun point on Kallar road while they were on their way to Dadyal from Islamabad airport. Family belonging to village Chana near Dadyal complained police delaying unnecessarily to register the case.

It is told by the family of Haji A Habib that in early hours, when they were on their way to village, a car approached with members wearing police uniforms and ordered them to stop near Sagri stop. they had fire arm and they snatched away passports, I phone 7s, mini I pad, visa card, 6k pounds, and gold jewellery off ladies.

They threatened the men of family and also took the key away from Taxi driver which family had hired. Family was left devastated and with locals help they could manage to get to police station Rawat where police refused to register the case saying incident didn't occur in their area.

It is not the first time that overseas Pakistanis have been welcomed in such way but it seems Pakistan government and local police dont care about it and also show such appaling behaviours that is condemnable.

تھانہ روات کے علاقہ جھمٹ میں سفاک قاتلوں نے ماں بیٹی اور کم سن نواسی انتہائی بے دردی کے ساتھ قتل

Two women and a child murdered in village Jhamat, Rawat .

some image

روات(چوہدری عقیل احمد نمائندہ پوٹھوار ڈاٹ کام )----تھانہ روات کے علاقہ جھمٹ میں سفاک قاتلوں نے ماں بیٹی اور کم سن نواسی کو انتہائی بے دردی کے ساتھ قتل کر کے گردنوں پر چھری چلانے کے بعد چہروں پر تیزاب پھینک دیا ،سفاک قاتل تینوں نعشیں گھر کے کمرہ میں بند کر کے باآسانی فرار

اطلاع ملنے پر ایس ایچ او روات انسپکٹر بشارت عباسی دیگر عملہ کے ہمراہ جائے وقوعہ پر پہنچ گئے نعشیں چند دن پرانی ہیں مقامی پولیس کا مؤقف علاقہ میں واقعہ پر شدید خوف وہراس قاتلوں کی فوری گرفتاری کا مطالبہ ،روات پولیس کے مطابق نواحی علاقہ جھمٹ کے رہائشی عمران کی والدہ 55 سالہ منیر بیگم ،بیوی 35 سالہ ناصرہ اور 10 سالہ بچی مسکان کی خون میں لت پت گردن کٹی نعشیں انکے گھر کے اندر سے ملی ہیں جن کی شناخت ختم کرنے کیلئے سفاک قاتلوں نے قتل کے بعد انکے چہروں پر تیزاب ڈال دیا ہے

نعشوں کے قریب سے مقتولہ خاتون کا پرس اور موبائیل فون بھی برآمد ہوا ہے پولیس کے مطابق مقتولہ ناصرہ بی بی روات میں بیوٹی پارلر کا کام کرتی تھی تاہم مقدمہ کی تفتیش صدر سرکل میں واقع ایچ آئی یو کے سپرد کر دی گئی ہے ابتدائی طور پر پولیس کی تفتیشی ٹیم کسی بھی نتیجہ پر نہ پہنچ سکی ۔

کلر سیداں؛ نمائندہ پوٹھوارڈاٹ کام ،اکرام الحق قریشی۔۔۔۔ سا گر ی کے گا ؤ ں جھمٹ میں د و خو ا تین ا و ر کم سن بچی کو مقا می قبر ستا ن میں سپر د خا ک کر د یا گیا ملز ما ن کا تا حا ل سر ا غ نہیں لگا گز شتہ شا م جب ر و ات میں قا ئم بیو ٹی پا ر لر میں کا م کر نے و ا لی خو ا تین نے مقا می کو نسلر سا جد کو بتا یا کہ بیو ٹی پا ر لر کی ما لکن 27سا لہ نا صر ہ کا پا ر لر گز شتہ چند ا یا م سے بند پڑ ا ہے ا س کا مو با ئل فو ن بھی آ ف ہے ا و ر گا ؤ ں میں ا ن کے گھر پر تا لہ لگا ہے جس پر چےئر مین یو سی سا گر ی ر ا جہ شہز ا د یو نس پو لیس کے ہمر ا ہ جا ئے وقو عہ پر پہنچے ا و ر مر کز ی د ر و ا ز ے سے ا ند ر جھا نکا تو کمر ے کا د ر و ا ز ہ کھلا نظر آ یا ا و ر لا ئٹ بھی جل ر ہی تھی پو لیس جب د یگر ا فر ا د کی مو جو د گی میں تا لہ تو ڑ کر ا ند ر د ا خل ہو ئی تو د و نعشیں متعد د ر ضا ئیو ں کے نیچے پڑ ی ہو ئی تھیں جبکہ کہ نا صر ہ کی نعش د و سر ے کمر ے میں بر قعے سمیت پڑ ی ہو ئی تھی ا س کے سا تھ ہی ا یک شا پر تھا جس میں و ہ ا پنی بچی کے لیے نمکو پیکٹ ،بر یڈ ا و ر گھر کے لیے سبز ی لا ئی تھی نا معلو م ملز ما ن نے یہ و ا ر د ا ت نا صر ہ کے گھر پہنچنے سے قبل د ن کے و قت شر و ع کی ا س کی 60سا لہ و ا لد ہ منیر ہ بیگم کو قتل کیا جس کے بعد نا صر ہ کی 8سا لہ بیٹی کو بھی ا س بنا پر مو ت کے گھا ٹ ا تا ر د یا کہ و ہ ا ن کو شنا خت کر تی تھی ملز ما ن نے نا صر ہ کے گھر آ نے کا ا نتظا ر کیا ا و ر ا س کے گھر میں د ا خل ہو تے ہی ا سے قتل کر د یا ا و ر ا سے بر قعہ ا تا ر نے کی بھی مہلت نہ ملی تینو ں نعشیں ا س قد ر بو سید ہ ہو چکی تھیں کی کسی گا ڑ ی و ا لے نے ا نہیں ہسپتا ل منتقل کر نے پر ر ضا مند ی ظا ہر نہ کی شد ید بو کے با عث ا ند ر جا نے و ا لے پو لیس ملا ز مین سمیت پند ر ہ سے ز ا ئد ا فر ا د بیہو ش بھی ہو ئے پو لیس حکا م کی د ر خو ا ست پر 1122مند ر ہ نے ا پنی تین گا ڑ یو ں کے ذ ر یعے نعشو ں کو ہسپتا ل منتقل کیا ۔

Rawat; A mother and her daughter along with her grand child have been murdered in villge Jhamat in the region of Rawat, The killer then fled after comminting triple murder.

According to Rawat police, The three murdered have been identified as Muneer Begum, 55, her daughter Nasira, 35, and her daughter Maskan aged just ten.

All three had been stabbed to death and then hd acid thrown over them, The police found three bodies in horrrific situation and locked in a room by their killer.

Rawat police are investigating the triple murder and told meia that Nasira who was murdered had been working at a beauty parlour in Rawat.

شرفاء کو اغواء کر کے نجی ٹارچر سیل میں لے جا کر لوٹنے والے راولپنڈی پولیس کے دو اہلکار گرفتار

Two police officers arrested for arresting and robbing innocent man

some image

روات(چوہدری عقیل احمد نمائندہ پوٹھوار ڈاٹ کام ) ۔۔۔۔ شرفاء کو اغواء کر کے نجی ٹارچر سیل میں لے جا کر لوٹنے والے راولپنڈی پولیس کے دو اہلکار گرفتار ،تھانہ موگاہ میں تعینات کانسٹیبل توصیف ستی اور سیکورٹی ون صدر بیرونی کے کانسٹیبل چنگیز کو روات پولیس نے رنگے ہاتھوں گرفتار کر کے 3 گھنٹے بعد خودساختہ نجی ٹارچر سیل سے مغوی نوجوان زاہد کو بازیاب کروا لیا تاحال مقدمہ کی دفعات کا تعین نہ ہو سکا،

تفصیلات کے مطابق درخواست گزارنعیم احمدنے روات پولیس کو بتایا کہ میں اور میرا عزیز زاہد تھانہ روات کے علاقہ فیز7 میں موجود تھے کہ اس دوران دو سادہ لباس اہلکاروں نے اچانک زاہد کو زبردستی اٹھا کر پرائیویٹ گاڑی میں ڈال لیا اور میرے شور پر گاڑی بھگا کر لے گئے بعد ازاں مجھے میرے موبائیل فون پر کال کی کہ ہم پولیس ملازمین ہیں رقم مبلغ50 ہزار روپے لیکر سواں کیمپ پہنچ جاؤ تاہم ایس ایچ او روات انسپکٹر بشارت عباسی اور سب انسپکٹرسرمد ،سب انسپکٹر رانا اکبر نے بھاری نفری کے ہمراہ ملزمان کی بتائی گئی جگہ پر چھاپہ مار کر مزاحمت کے بعد دونوں پولیس اہلکاروں توصیف ستی اور چنگیز کو گرفتار کر لیا

اور بعد ازاں تھانہ روات پہنچ کر ملزم اہلکاروں کے انکشاف پر مغوی نوجوان زاہد کو سواں کیمپ کے علاقہ میں نجی ٹارچر سیل سے بازیاب کروا لیاگیا ایس ایچ او روات انسپکٹر بشارت عباسی کے مطابق دونوں گرفتار پولیس اہلکاروں کے بارے میں افسران بالا کو آگاہ کر دیا گیا ہے اور افسران کے حکم کے مطابق مقدمہ کا اندراج کر دیں گئے ۔

Rawat; Two officers from Rawalpindi have been arrested by Rawat police for arresting a innocent man and taking him to a torcher sell and then demanding ransom.

Constable Tauseef Satti and constable Changaiz both from Rawalpindi police stations were arrested after they had arrested a innocent man Zahid and taken him to a torcher cell, Where the two corrupt police officers demanded a fee of 50,000 rps from the family.

The family of Zahid then contacted Rawat police, who raided a torcher cell in Sawan camp area, Zahid was released from the cell while the two police officers were arrested.

The police officers were handed over two authorities and demands are being made to have a case registered against both police officers but so far the case has not been registered.

مریم نواز کو سیلوٹ کیوں کیا، ارسلہ سلیم کو خاتون وکیل کا قانونی نوٹس

آمنہ علی ایڈوکیٹ کا مطالبہ ہے کے ایس پی اسپیشنل برانچ ارسلہ سلیم 15 دن میں قوم سے معافی مانگیں

Legal notice served to ICT police officer who saluted Maryam Nawaz

some image some image

اسلام آباد ( نمائندہ پوٹھوار ڈاٹ کوم ، راجہ طیب ) ۔۔۔ مریم نواز کو سیلوٹ کیوں کیا، ارسلہ سلیم کو خاتون وکیل کا قانونی نوٹس۔قانونی نوٹس آمنہ علی ایڈووکیٹ نے بھیجا۔ آمنہ علی ایڈوکیٹ کا مطالبہ ہے کے ایس پی اسپیشنل برانچ ارسلہ سلیم 15 دن میں قوم سے معافی مانگیں۔

معافی نہ مانگنے صورت میں وہ قانونی چارہ جوئی کا حق محفوظ رکھتی ہیں۔اُنھوں نے اس حوالے سے سوال اُٹھایا ہے کے مریم نواز کو سیلوٹ کس اتھارٹی کے تحت کیا گیا۔

آمنہ علی نے ارسلہ سلیم کو مخاطب کرتے ہوئے کہاکے آپ عوام کے ٹیکس کے پیسے سے تنخواہ وصول کرتی ہیں۔مریم نواز کو سیلوٹ کرنے سے قوم کو دھچکا پہنچا۔اُنھوں نے ارسلہ سلیم سے یہ بھی سوال کیا ہے کے کیا ملزمہ کو سیلوٹ مارنا غیرقانونی نہیں۔

آمنہ علی ایڈوکیٹ کا کہنا ہے کے ایس پی ارسلہ سلیم 15یوم کے اندر نوٹس کا جواب دیں ورنہ وہ ان کے خلاف قانونی چارہ جوئی کا حق محفوظ رکھتی ہیں۔

Rawalpindi; High Court Advocate Amna Ali has sent a legal notice to SP special branch Arsala Saleem for saluting Maryam Nawaz as she arrived at the Federal Judicial Academy (FJA) to appear before the joint investigation team (JIT) probing the Sharif family's business dealings abroad.

The legal notice questions the capacity in which SP Saleem saluted Maryam Nawaz, as the latter does not hold any government office."For being a civil servant who serves as an SP in the Islamabad Capital Territory (ICT) police, fetching salary from the taxpayers' money, please explain the reason for your action which [caused] agony and mental shock to the public at large," reads the legal notice.

The notice further demands an apology from SP Saleem in front of media personnel along with an explanation within 15 days. The legal notice threatens to move ahead with legal proceedings against the ICT police officer.

The complainant goes on to question how a salute to an accused person should not be considered illegal.

Pothwar. COM

+44 7763249391 | pothwar@yahoo.co.uk
© Copyright Pothwar.com | Est. 2000-2017

new graphics