Our _Blog_

Our Daily News

محکمہ کسٹمز کا جی پی او پر چھاپہ۔برطانیہ کے لیے بک کرائے گئے پارسلز میں سے دو کلوگرام ہیروئن برآمد

Customs International Mail Office at GPO Islamabad seized 2 kilogram of heroin from parcel addressed to UK

some image some image

سلام آباد ( نمائندہ پوٹھوار ڈاٹ کوم ، راجہ طیب ) ۔۔۔ محکمہ کسٹمز کا جی پی او پر چھاپہ۔برطانیہ کے لیے بک کرائے گئے پارسلز میں سے دو کلوگرام ہیروئن برآمد۔پارسلز پر ای ایٹ کا پتہ اور کاشف شہزار نامی شخص کا نام درج ہے۔دونوں پارسلز دو مختلف پتوں پر برطانیہ بھجوائے جا رہے تھے۔کسٹمز نے ملزم کی تلاش کے لیے ٹیمیں تشکیل دے دی۔ کسٹمز حکام کے مطابق دونوں پارسلز کا کل وزن 17 اعشاریہ 5 کلوگرام ہے۔

کسٹم حکام کا کہنا تھا کہ پکڑی گئی ہیروئن کی مالیت بیس ملین سے زائد ہے اور چونکہ ائرپورٹ پر سونگھنے والے کتوں کی مدد سے سخت چیکنگ کی جاتی ہے تو اسی لئے مجرموں نے اب دوسرا راستہ اختیار کرنا شروع کر دیا ہے۔کسٹم آفیسر کا کہنا تھا کہ وہ روٹین کی چیکنگ کر رہے تھے کہ انھیں مذکورہ پیکٹ پر شبہ ہوا اعلٰی حکام کی اجازت کے بعد جب انھوں نے پیکٹ کھولا تو ان کے شبے کی تصدیق ہو گئی۔

گنرل پوسٹ آفس اسلام آباد سے مذکورہ پارسل برطانیہ کے لئے بک کروایا گیا یہ ہیروئن دو الگ الگ پارسلز میں بند کی گئی اور انھیں انتہائی مہارت سے پیپر کے ڈبوں میں بند کیا گیا تھا۔ برطانیہ کے لئے دو الگ الگ پتوں کا انتخاب کیا گیا تھا۔

ISLAMABAD: Customs International Mail Office (IMO)at GPO Islamabad seized 2 kilogram of fine quality heroin from parcel concealed in layers of a cartoon made by paper, the heroin was shipped for United Kingdom (UK), and the IMO doing raids for arrest of the criminal involve in above said seize, the worth of seized 02 kilogram of heroin was estimated Rs.20 million.

Collector Dr. Arslan told that during routine checking the team of customs department under the supervision Inspector Shabbir found a suspicious parcel (carton) and informed the assistant collector IMO about it, after getting permission the inspector open the parcel and found the fine quality of heroin which was tactfully concealed in paper carton.

The Collector said that the seized heroin consignment was booked from GPO Islamabad and was shipped to UK. He said that under following the orders of Member Customs Zahid Kokhar the collector Islamabad had taken tight rummaging and checking measures by sniffing dogs at Islamabad Air port the Heroin Smugglers tried to send their consignments via IMO Islamabad.

سپریم کورٹ نے پاناما کیس کا فیصلہ سناتے ہوئے نوازشریف کو نااہل قرار دے دیا۔

Pakistan Prime Minister Nawaz Sharif resigns after Supreme Court ruling

some image

لندن، پوٹھوار ڈاٹ کوم ،محمد نصیر راجہ۔۔۔۔ پاکستان کی سپریم کورٹ نے پاناما کیس کا فیصلہ سناتے ہوئے وزیر اعظم پاکستان کو نا اہل قرار دے دیا ہے جس کے بعد انھوں نے وزیر اعظم کے عہدے سے استعفی دے دیا۔ جمعرات کی رات سے ہی پاناما لیکس کے مقدمے کا فیصلہ سوشل میڈیا پر ایک گرما گرم موضوع بنا رہا۔ جبکہ جمعے کی صبح عدالتی فیصلے کے بعد پاکستانی سوشل میڈیا میں پاناما ورڈکٹ، نواز شریف، گون نواز گون، پاناما پیپرز اور ایسے ہی دیگر موضوعات ٹرینڈ کرتے رہے۔

اس کے علاوہ عالمی سطح پر بھی پاناما ورڈکٹ سرفہرست کا ٹرینڈ تھا جبکہ ترک زبان میں 'وزیراعظم نواز شریف' بھی عالمی سطح پر ٹرینڈ کر رہا ہے۔ پاکستان تحریک انصاف کے چیئرمین عمران خان کی سابقہ بیوی جمائما خان نے ٹویٹ کیا کہپ 'گون نواز گون' یعنی 'نواز گیا'

مریم نے ٹویٹ کیا کہ 'پیاری دنیا، مجھے پاکستان پر فخر ہے کہ یہاں کے وزیراعظم کو بدعنوانی کے الزام میں نااہل قرار دیا گیا ہے .... یہ ایک نئے پاکستان کا آغاز ہے۔' شاہ زیب جیلانی نے لکھا کہ 'یہ معاملہ بدعنوانی کا کم اور ذمہ داری کا زیادہ ہے۔ یہ ہمیں یاد دلاتا ہے کہ پاکستان پر حکومت کرنے والا سیاسی طبقے کیسا ہے۔' ندرت خواجہ کا کہنا تھا کہ 'پاکستان کی تاریخ: فوجی سے عدالتی بغاوت تک'

انڈیا کے سوشل میڈیا پر بھی اسی پر بحث چل رہی ہے اور بہت سے لوگ اس پر بات کر رہے ہیں. اس موضوع پر انڈین سیاسی جماعت کانگریس کے سینیئر رہنما دگ وجے سنگھ نے لکھا کہ 'پاکستان کے وزیراعظم نواز شریف کو سپریم کورٹ نے نااہل قرار دے دیا ہے۔ وزیراعظم صاحب ہمارے یہاں کے پاناما پیپرز میں جنھیں مجرم بتایا گیا ہے ان کا کیا بنا؟' انیل نے لکھا کہ 'پاکستان کی سپريم کورٹ کی عزت کرتا ہوں، انھوں نے وزیر اعظم کو استعفیٰ دینے پر مجبور کر دیا۔' نونیت مندرا نے لکھا کہ 'یہ افسوسناک ہے۔ اس طرح کا کچھ کبھی انڈیا میں ہوگا اس کی مجھے امید بھی نہیں ہے! موجودہ وزیر اعظم کو نااہل قرار دینا .... پاکستان سپریم کورٹ کو سلام ہے۔'

London; Pakistan Prime Minister Nawaz Sharif has resigned from his post, his office has said. The resignation comes hours after the country’s Supreme Court disqualified him over corruption claims against his family’s wealth.

The court said Mr Sharif was not fit to hold office and ordered a criminal investigation into him and his family after they could not account for the Sharifs’ vast wealth. A spokesman for Mr Sharif said the premier had stepped down despite having reservations about the court order.

The statement claimed justice had not been done, but the Prime Minister stepped down to show his respect for the judiciary and rule of law.

The verdict, delivered by a five-member supreme court, comes after the Panama Papers leak documented the involvement of Mr Sharif’s children in the purchase of high-end London properties through offshore companies.

مریم نواز کو سیلوٹ کیوں کیا، ارسلہ سلیم کو خاتون وکیل کا قانونی نوٹس

آمنہ علی ایڈوکیٹ کا مطالبہ ہے کے ایس پی اسپیشنل برانچ ارسلہ سلیم 15 دن میں قوم سے معافی مانگیں

Legal notice served to ICT police officer who saluted Maryam Nawaz

some image some image

اسلام آباد ( نمائندہ پوٹھوار ڈاٹ کوم ، راجہ طیب ) ۔۔۔ مریم نواز کو سیلوٹ کیوں کیا، ارسلہ سلیم کو خاتون وکیل کا قانونی نوٹس۔قانونی نوٹس آمنہ علی ایڈووکیٹ نے بھیجا۔ آمنہ علی ایڈوکیٹ کا مطالبہ ہے کے ایس پی اسپیشنل برانچ ارسلہ سلیم 15 دن میں قوم سے معافی مانگیں۔

معافی نہ مانگنے صورت میں وہ قانونی چارہ جوئی کا حق محفوظ رکھتی ہیں۔اُنھوں نے اس حوالے سے سوال اُٹھایا ہے کے مریم نواز کو سیلوٹ کس اتھارٹی کے تحت کیا گیا۔

آمنہ علی نے ارسلہ سلیم کو مخاطب کرتے ہوئے کہاکے آپ عوام کے ٹیکس کے پیسے سے تنخواہ وصول کرتی ہیں۔مریم نواز کو سیلوٹ کرنے سے قوم کو دھچکا پہنچا۔اُنھوں نے ارسلہ سلیم سے یہ بھی سوال کیا ہے کے کیا ملزمہ کو سیلوٹ مارنا غیرقانونی نہیں۔

آمنہ علی ایڈوکیٹ کا کہنا ہے کے ایس پی ارسلہ سلیم 15یوم کے اندر نوٹس کا جواب دیں ورنہ وہ ان کے خلاف قانونی چارہ جوئی کا حق محفوظ رکھتی ہیں۔

Rawalpindi; High Court Advocate Amna Ali has sent a legal notice to SP special branch Arsala Saleem for saluting Maryam Nawaz as she arrived at the Federal Judicial Academy (FJA) to appear before the joint investigation team (JIT) probing the Sharif family's business dealings abroad.

The legal notice questions the capacity in which SP Saleem saluted Maryam Nawaz, as the latter does not hold any government office."For being a civil servant who serves as an SP in the Islamabad Capital Territory (ICT) police, fetching salary from the taxpayers' money, please explain the reason for your action which [caused] agony and mental shock to the public at large," reads the legal notice.

The notice further demands an apology from SP Saleem in front of media personnel along with an explanation within 15 days. The legal notice threatens to move ahead with legal proceedings against the ICT police officer.

The complainant goes on to question how a salute to an accused person should not be considered illegal.

Pothwar. COM

+44 7763249391 | pothwar@yahoo.co.uk
© Copyright Pothwar.com | Est. 2000-2017

new graphics