Our _Blog_

Our Daily News

شاہدہ اکبر ویکسم کورٹ پیرش کونسل سلاو کی چئرمین اور راجہ فیاض وائس چیرمین منتخب

Shaida Akbar of Kallar Syedan appointed Chairman of Wexham court parish council Slough

some image some image

سلاو(نمائندہ پوٹھوار ڈاٹ کام افتخار وارثی) شاہدہ اکبر کو چیرمین اور راجہ فیاض کو ویکسم کورٹ پیرش کونسل کا وائس چیرمین منتخب کر لیا گیا- اس سلسلے میں ایک پروقار تقریب کا انعقاد پیرش ہال ویکسم میں کیا گیا- جس میں لیبر پارٹی کے امیدوار برائے ایم پی، سابق مئیرز، کونسلرز سابق کونسلرز کے علاوہ سلاو کے مشہور بزنس مین و سیاسی و سماجی شخصیات نے بھر پور شرکت کی اور نومنتخب چئرمین شاہدہ اکبر اور وائس چیئرمین راجہ فیاض کو مبارک باد پیش کی-

اس تقریب کا آغاز تلاوت قرآن پاک سے ہوا اس کے بعد نومنتخب چئرمین شاہدہ اکبر وائس چیئرمین راجہ فیاض اور لیبر پارٹی کے امیدوار ایم پی نے خطابات کیے- نماہندہ پوٹھوار ڈاٹ کام سے خصوصی گفتگو کرتے ہوئے چئرمین شاہدہ اکبر اور وائس چیئرمین راجہ فیاض نے پیرش کونسل کے حوالے سے تفصیلات سے آگاہ کیا اور کہا کہ ہم کمیونٹی کو بہتر سے بہتر سہولیات مہیا کریں گے

اور انشاءاللہ کمیونٹی کے تعاون سے اس کو مزید بہتر بنائیں گے- آخر میں کیک بھی کاٹا گیا اور مہمانوں کے لیے کھانے کا خصوصی بندوبست بھی کیا گیا تھا مزید تفصیلات کے لیے ویڈیو ملاحظہ کیجئے-

Slough; A Function was held in Slough where Shaida Akbar of village Chak Mirza in Kallar Syedan was elected Chairman of Wexham court parish council and Raja Fayaz of Nanda Jatal, Chauk Pindori in Kallar Syedan was elected vice Chairman.

Wexham Court Parish Hall supplies our local community in Slough with a wide choice of services and facilities. Local residents hold meeting to discuss currents issues in the region.

Large number of social and political personalities along with local residents attended the function, Shaida Akbar and Raja Fayaz told pothwar.com If you're looking for a modern venue in Slough, then why not try your local Parish Hall? Wexham Court Parish Hall is available for rent and is ideal for many uses, from weddings through to baby and toddler groups. We always support our local community.

Slough; For more pls see video below....

سیاسی پناہ کے نام پر برطانوی حکومت سے چون لاکھ سالانہ بٹورنے والے نوسربازجوڑے کو جیل کی سزا

جوڑے نے بنک میں تین کروڑ سینتیس لاکھ موجود ہونے کے باوجود خود کو مفلوک الحال ظاہر کیا

Wealthy Pakistani asylum seekers fraudulently claiming benefit are jailed in Manchester

some image

برمنگھم نمائندہ پوٹھوار ڈاٹ کوم شاہد ہاشمی----- برطانیہ میں سیاسی پناہ کے نا م پر مفادات بٹورنے والے شوہر نے جیل سے رہائی پائی تو اْس کی بیوی کو چھ ماہ کے لیے جیل بھیج دیا گیا۔ عدالت کے اس فیصلے سے پاکستانی جوڑے کے بچے چائلڈکئیر میں جانے سے بچ گئے۔سید زیدی اور رضوانہ کمال نے برطانیہ کی عدالت میں سیاسی پناہ کی درخواست دی تھی جس کی منظوری کے بعد انہوں نے دوہزار بارہ سے دوہزار سولہ تک تقریباً 54 لاکھ روپے سالانہ بٹورے۔ اس دوران ان کے بینک اکاونٹس میں تین کروڑ سینتیس لاکھ روپے موجود تھے اور دو گاڑیاں بھی زیر استعمال رہیں۔خفیہ اطلاع پر برطانوی محکمہ داخلہ نے پاکستانی جوڑے کو گرفتار کرکے عدالت میں پیش کیاجبکہ مانچسٹر کی عدالت نے فراڈ ثابت ہونے پر میاں ،بیوی کو چھ چھ ماہ کے لیے جیل بھیجنے کا حکم دیا تھا۔

پاکستان میں ایک امیر خاندان سے تعلق رکھنے اور اپنی ذاتی جائیداد ہونے کے بوجود مذکورہ جوڑے نے سیاسی پناہ حاصل کرتے ہوئے برطانوی حکومت کو بیوقوف بنایا اور اور اپنے اثاثے ظاہر نہ کیے جبکہ ان کے بنک میں دو لاکھ پچاس ہزار پونڈ سے زائد رقم موجود تھی۔ اور محکمہ داخلہ سے غلط بیانی کرتے ہوئے کہا کہ اگر انھیں سیاسی پناہ نہ ملی تو پاکستان میں انھیں قتل کردیا جائے گا۔جس کی بنا پر نہ صرف ھوم آفس نے انھی شیلٹر مہیا کیا بلکہ سالانہ چالیس ہزار پونڈ سے زائد سوشل فنڈز بھی ادا کئے۔ مگر ایک خفیہ اطلاع پر برطانوی محکمہ داخلہ نے جب مذکورہ جوڑے کے خلاف کارروائی کی تو پتہ چلا کہ جوڑے کے پاس انتہائی مہنگی دو کاریں موجود ہیں اوران کے پاس وکٹورین زمانے کا ایک خوبصورت گھر بھی موجود ہے۔

Manchester; A WEALTHY Pakistani couple who fraudulently claimed £40,000 a year in benefits after claiming asylum in Britain were jailed six months apart so their children didn’t have to be taken into care.

Syed Zaidi, 41, and his wife Rizwana Kamal, 40, claimed asylum seekers’ benefit, child tax and working tax credits and child benefits for their three children – on top of free accommodation – worth £150,000, despite having more than £250,000 in the bank.

The university graduates claimed they were being persecuted in their native Pakistan and urged the Home Office to give them shelter, claiming £150,000 worth of handouts.

They splashed out on two cars and moved into a Victorian terraced house in Denton, near Manchester, but were caught after a tip-off to the Home Office. It is thought they won the right to stay in the UK during their four-year scam between 2012 and 2016.

At Minshull Street Crown Court, Manchester Judge Bernard Lever jailed the couple for ten months each after they admitted benefit fraud.

But in an unusual move he delayed locking up Kamal until this week, after her husband was released having served half his sentence. It means their children will not be taken into care at further expense to the taxpayer.

Pothwar. COM

+44 7763249391 | pothwar@yahoo.co.uk
© Copyright Pothwar.com | Est. 2000-2016

new graphics