Our _Blog_

Our Daily News

کلرسیداں کے مشہور مقدمہ قتل ناہید اختر زوجہ محمدشبیرقریشی کے ملزم کوعدالت سے سزائے موت کاحکم

Man who murdered Nahid Akhtar of Norway in Kallar Syedan given death sentence

some image

Above; File photo of Nahid Akhtar being treated at THQ Kallar Syedan.

کلر سیداں؛ نمائندہ پوٹھوارڈاٹ کام ،اکرام الحق قریشی۔۔۔۔ کلرسیداں کے مشہور مقدمہ قتل ناہید اختر زوجہ محمدشبیرقریشی کے ملزم کوعدالت نے سزائے موت کاحکم دے دیا۔ تفصیلات کے مطابق بھیائی مہرعلی خان کے محمدشبیرقریشی اپنی اہلیہ ناہید اخترکے ہمراہ ناروے میں مقیم تھا اس دوران انھوں نے کلرسیداں شہرمیں بھی اپناگھرتعمیرکرنے کافیصلہ کیا۔

جس کے لئے ناہید اخترناروے سے کلرسیداں منتقل ہوئی، اور انھوں نے مکان کی تعمیرشروع کرادی۔ اسی دوران ان کی ایک مزدور ذکاء اللہ ساکن موہڑہ وینس یوسی مغل تھانہ روات سے شناسائی ہوئی جس نے گھرتک رسائی حاصل کرلی۔ 23دسمبر2014ء کوذکاء اللہ نے ناہید اختر کے گھردستک دی اس نے دروازہ کھولا تو ملزم نے تیل ڈال کراسے آگ لگا دی،

جس سے وہ خود بھی جھلس گیاتھا، ناہید اختر کوہسپتال پہنچایاگیا جہاں اس نے اپنے نزعی بیان میں کہاکہ اسے آگ ذکاء اللہ نے لگائی۔ جس کے بعد ناہید اختر کوناروے منتقل کیاگیا جہاں اس نے دم توڑ دیا۔

ایڈیشل سیشن جج راولپنڈی حسنین رضا کی عدالت میں ملزم کے خلاف چالان پیش ہوا، استغاثہ کی جانب سے راجہ ستااللہ ایڈووکیٹ سپریم کورٹ نے دلائل دیئے ، عدالت نے دلائل سے اتفاق کرتے ہوئے ملزم کوسزائے موت کاحکم سنادیا۔ یادرہے کہ ملزم پہلے ہی اڈیالہ جیل میں قیدہے۔

Norway / Kallar Syedan; Zika Ullah who was responable for torching and murdering Naheed Akhtar of Norway and village Bhiye Mehar Ali has been given death sentence, Additional session judge Rawalpindi, Husnain Raza gave the verdict.

Zika Ullah was arrested on 23rd December 2014 and sent to Adiyala jail, Nahid Akhtar, Mother of six who had arrived from Norway was thrown petrol at her face and set alight in a row in village Bhaiye Mehar Ali near Sakot. According to Kallar Syedan Police, Nahid Akhtar wife of Mohammad Shabbir had arrived alone from Norway to construct a house in her native village of Bhaiye Mehar Ali

Nahid Akhtars driver Zika Ullah of Morra Vaince in Rawat was demanding money and after being refused the money demand had threatened Nahid Akhtar.

Nahid Akhtar went to open her front door she was met by Zika Ullag who threw petrol at her and set alight with lighter, according to Nahid Akhtar who told pothwar.com in 2014 while she was being treated at THQ hospital in Kallar Syedan, She was later flown to Norway but died from her burns.

کونسلر عابد حسین بریڈفورڈ کے لارڈ مئیر منتخب

Councillor Abid Hussain elected as Lord Mayor of Bradford at City Hall

some image

بریڈفورڈ، نمائندہ پوٹھوار ڈاٹ کوم، محمد نصیر راجہ۔۔۔۔۔۔ پاکستانی نژاد کونسلر عابد حسین بریڈفورڈ کے لارڈ مئیر منتخب کر لیے گئے۔وہ کیلی کے علاقے سے کونسلر منتخب ہوئے تھے۔ اور مئیر کی پوسٹ پر آئندہ بارہ ماہ کے لئے خدمات انجام دیں گے۔واضح رہے کہ بریڈفورڈ میں پاکستانیوں کی ایک بڑی تعداد آباد ہے اور اسے بریڈفورڈستان بھی کہا جاتا ہے۔

مئیر عابد حسین کا کہنا تھا کہ وہ تمام مذاہب اور کمیونیٹیز کو ساتھ لے کر چلنا چاہتے ہیں اور تمام مذاہب میں ہم آہنگی کے فروغ کے لئے اپنا کردار ادا کرنا چاہیں گے۔ انھیں نوجوانوں کے ساتھ مل کر تعلیم کے فروغ کے لئے کام کرنے کی بھی خواہش ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ وہ کیلی سے کونسلر منتخب ہوئے اور انھیں اس بات کی بھی زیادہ خوشی ہے کہ ڈپٹی لارڈ مئیر کا تعلق بھی کیلی کونسل سے ہے۔نئے لارڈ مئیر نے ان چیریٹی تنظیموں کا بھی اعلان کیا ہے جنھیں اپنی ٹرم کے دوران وہ سپورٹ کریں گے ان میں ڈوان سندروم ٹریننگ اور سپورٹ سروس کی تنظیم شامل ہے۔

نئے لارڈ مئیر نے پچھلے سال شروع ہونے والے پروجیکٹ کے لئے بھی اپنی سپورٹ کا اظہار کیا جس میں بریڈفورڈ کی تمام کمیونیٹیز ، مذاہب اور مختلف بیک گراونڈ رکھنے والے افراد کو ایک پلیٹ فارم پر اکٹھا کرنا شامل ہے۔

Bradford; KEIGHLEY councillor Abid Hussain has been formally installed as the new Lord Mayor of Bradford. Cllr Hussain, who represents Keighley Central, will hold the civic post for 12 months. Largest number of Pothwari living in UK are settled in Bradford.

Mayor Abid Hussain said “I will be working with all faiths and will try to build some lovely bridges between the communities and all faiths and organisations, work with young people and in education. “I am particularly delighted to be a Lord Mayor from Keighley, and my Deputy Lord Mayor is also from Keighley.

The new Lord Mayor has unveiled the charities he will be supporting through the appeal. He is backing Bingley-based charity the Down Syndrome Training and Support Service, and the Wishing Well Appeal, which gives out small grants to smaller charities and organisations around the district.

The the new Lord Mayor has been so supportive of Believing in Bradford, a project we launched last year bringing a whole range of people from different backgrounds, faiths and communities together to represent the district.

رائل کورٹ آف جسٹس لندن کی جانب سے پاکستانی پیر محبوب اختر کی سزا چودہ سال سے کم کر کے گیارہ سال کر دی گئی

پہلے برمنگھم کراون کورٹ نے انھیں پراپرٹی فراڈ اور ٹیکس چوری کے جرم میں چودہ سال کی سزا سنائی تھی

Prison Sentence of British Pakistani Pir Mehboob Akhtar reduced to 11 years

some image

لندن، نمائندہ پوٹھوار ڈاٹ کوم، محمد نصیر راجہ۔۔۔۔لاکھوں پونڈ مالیت کے پراپرٹی فراڈ اور ٹیکس چوری کے الزام میں گزشتہ سال چودہ سال کی سزا پانے والے پاکستانی نژاد پیر محبوب اختر کی سزا میں رائل کورٹ آف لندن نے اپیل کے بعدتین سال کی کمی کر دی ۔یعنی اب پیر محبوب اختر کو گیارہ سال قید بھگتنا ہوگی۔

برمنگھم کراون کورٹ نے تقریباً ایک ملین پونڈ کی پراپرٹی کے حوالے سے مارگیج کے لئے رقم فراہم کرنے کرنے والوں سے غلط بیانی کے الزام میں محبوب اختر کے ساتھ ان کے دیگر نو ساتھیوں جن میں ان کی اہلیہ اور بیٹی بھی شامل تھی۔سزا سنائی تھی۔اس سزا کے خلاف محبوب اختر کے وکیل نے لندن ہائی کورٹ میں اپیل دائر کر دی۔جو مسترد کر دی گئی۔مگر وکیل نے ہمت نہ ہاری اور اگلے مرحلے پر ایک اور اپیل کر دی۔جس کی سماعت کے بعد موجودہ نتیجہ سامنے آیا۔

اس مقدمے میں مذکورہ پیر کی اہلیہ پچپن سالہ خدیجہ اختر کو چار سال اور صاحبزادی رشبا منی اختر کو ساڑھے تین سال کی سزا سنائی گئی تھی اور یہ لوگ اب بھی جیل میں ہیں۔ان کے ساتھ جن سات دوسرے افراد کو سزائیں سنائی گئیں ان میں دو مارگیج بروکر بھی شامل ہیں۔ان لوگوں کو سات سال قید کی سزا سنائی گئی ہے۔

LONDON: Three judges at the Royal Courts of Justice have reduced the prison sentence of British Pakistani faith healer Mehboob Akhtar, of Stoke-on-Trent, from 14 to 11 years. The judges, however, stated that his conviction last year regarding to multi-million-pound property fraud and tax-evasion scam was right on the mark.

In April last year, Mehboob Akhtar also known as Saint Pir Pandariman, was sentenced by the Birmingham Crown Court for 14 years along with nine others, including his wife and daughter, after being found guilty of lying to mortgage lenders to amass nearly £1m of property. After a lengthy trial, he was convicted of 11 charges including five of conspiracy to commit fraud and cheating Her Majesty's Revenue and Customs (HMRC) out of £271,000.

Pir Pandariman’s wife Khadija Akhtar, 55, was convicted of offences including cheating HMRC and conspiracy to obtain a money transfer by deception. She is currently in prison for four years. Pir Pandariman’s daughter, Rushbamani Akhtar, 30, was sentenced to three-and-a-half years after being convicted of entering into an arrangement to facilitate the acquisition, retention, use or control of criminal property and conspiracy to commit fraud.

Seven others - including two mortgage brokers - were sentenced after being convicted of charges including conspiracy to defraud and obtaining money transfers by deception. They were Mohammed Hussain, jailed for seven years; Alfan Ali, sentenced for six years; Mohammed Gaffar, jailed for five years; Naqiat Akhtar, jailed for three-and-a-half years;

Pothwar. COM

+44 7763249391 | pothwar@yahoo.co.uk
© Copyright Pothwar.com | Est. 2000-2017

new graphics