Our _Blog_

Our Daily News

ایوان عدل گوجرخان میں ہتھکڑی لگے دو ملزمان قتل، قاتل گرفتار ، مقتولین پر دو بھائیوں کو قتل کرنے کے الزام میں مقدمہ چل رہا تھا

Man arrested for revenge killing two people at the entrance of Gujar Khan court

some image

گوجرخان،دولتالہ؛ نمائندہ پوٹھوار ڈاٹ کوم، ،محمد نجیب جرال۔۔۔۔ ایوان عدل میں ہتھکڑی لگے دو ملزمان قتل، قاتل گرفتار کر لیا گیا مقتولین پر دو بھائیوں کو قتل کرنے کے الزام میں مقدمہ چل رہا تھا مقتولین کو اڈیالہ جیل سے پیشی پر گوجر خان لایا گیا تھا اڈیالہ جیل کی گارڈ نے چھپ کر جان بچائی قاتل اورمقتولین نواحی قصبہ گلیانہ کے رہائشی بتائے جاتے ہیں

واقعہ کے بعد احاطہ کچہری میں شدید خوف و ہراس پھیل گیا وکلاء نے واقعے کو پولیس کی غفلت کا نتیجہ قرار دے دیا لواحقین نے پولیس کی نااہلی کے خلاف جی ٹی روڈ بطور احتجاج بند کر دی ایوان عدل کے گیٹ پر تعیّنات عملہ معطل کر دیا گیا

تفصیلات کے مطابق گوجر خان ایوان عدل میں اس وقت شدید خوف و ہراس پھیل گیا جب اڈیالہ جیل سے پیشی پر لائے گئے مقدمہ قتل کے دو ملزمان عدنان اور عثمان کو رمضان نے اندھا دھند فائرنگ کر کے قتل کر دیا گیا عدنان نے موقع پر ہی دم توڑ دیا جب کہ عثمان شدید زخمی حالت میں راولپنڈی منتقل کرنے کے دوران روات کے قریب دم توڑ گیا پولیس ذرائع کے مطابق عدنا ن اور عثمان 2015ء میں تھانہ گوجر خان میں درج مقدمہ نمبر 45میں نامزد ملزم تھے اور ان پر قاتل محمدرمضان ولد محمد رفیق کے دو حقیقی بھائیوں کو قتل کرنے کا الزام تھا مقتولین اور قاتل نواحی قصبہ گلیانہ کے رہائشی بتائے جاتے ہیں عینی شاہدین کے مطابق ہتھکڑی میں جکڑے دونوں ملزمان ایڈیشنل سیشن جج محمد اسلم گوندل کی عدالت سے جب باہر نکلے تو قریب کھڑے محمد رمضان نے ان پر فائرنگ شروع کر دی جس کے نتیجے میں عدنان موقع پر ہی دم توڑ گیا

اس موقع پر شدید قسم کی افراتفری دیکھنے میں آئی جج صاحبان اور وکلاء حضرات اپنے اپنے چیمبرز میں چلے گئے عدالتی عملے اور دیگر سائلین کی دوڑیں لگ گئیں اور مقتولین کے ساتھ موجود اڈیالہ جیل کے اہلکاروں نے بھی چھپ کر جان بچائی عثمان کوشدید زخمی حالت میں راولپنڈی ریفر کیا گیا لیکن وہ روات کے قریب دم توڑ گیا واقعے کی اطلاع جنگل میں آگ کی طرح شہر بھر میں پھیل گئی اس دوران مقتولین کے لواحقین اور رشتہ داروں نے پولیس کی نااہلی کے خلاف ٹی ایچ کیو ہسپتال کے سامنے احتجاجاً جی ٹی روڈ بلاک کر دی اس موقع پر ایس پی صدر نے مظاہرین کو یقین دلایا کہ غفلت کے مرتکب اہلکاروں کے خلاف کارروائی کی جائے گی انھوں نے ایوان عدل کے گیٹ پر تعینات پولیس گارڈ کو معطل کر دیا معطل ہونے والوں میں اے ایس آئی امجد کانسٹیبل ناصر کانسٹیبل عبدالغفور اور ناصر شامل ہیں

گوجرخان،دولتالہ؛ نمائندہ پوٹھوار ڈاٹ کوم، ،محمد نجیب جرال۔۔۔۔ ایوان عدل گوجر خان میں سیکیورٹی کی ناقص صورت حال کے بارے میں خفیہ محکمہ جات نے کافی عرصہ قبل نشاندہی کر رکھی تھی مصدقہ ذرائع نے پوٹھوارڈاٹ کام کو بتایا کہ اس حوالے سے مفصل رپورٹ صوبائی وزارت داخلہ اور پولیس کے اعلیٰ حکام کو بھجوائی گئی تھی لیکن اس کے باوجود مقامی پولیس نے اس جانب کوئی توجہ نہیں دی دوسری جانب بار ایسوسی ایشن کے وکلاء نے بھی اس واقعے کو پولیس کی نااہلی قرار دیاہے بار ایسوسی ایشن کے صدر ایڈووکیٹ عمر اسداللہ نے واقعے کو افسوس ناک قرار دیتے ہوئے پولیس کی مبینہ نااہلی کے خلاف آج بروز جمعرات ہڑتال کا اعلان کر دیا ہے

Gujar Khan; The Gujar Khan court turned in to blood bath as two people were gunned down as they came for court hearing in Gujar Khan, A man has been arrested in a revenge killing.

Adnan and Usman of village Guliana, who were being brought to Gujar Khan for alleged murder trial were shot dead by a man. It is alleged that Adnan and Usman had shot dead two brothers in village Guliana in 2015.

In the revenge killing both men who were brought from Adiyala jail were gunned down, The police were accused of negligence, The Lawyers have protested and are holding strike over police security at the court.

چک بیلی خان میں زہریلا کھانا کھانے سے ایک کمسن بچی چل بسی جبکہ 9افراد بے ہوش ہو گئے

Child dies while eating poisonous food in Chak Baile Khan, while 9 people left unconscious

some image

گوجرخان،چک بیلی خان؛ نمائندہ پوٹھوار ڈاٹ کوم، ،مسعود جیلانی۔۔۔۔ چک بیلی خان میں زہریلا کھانا کھانے سے ایک کمسن بچی چل بسی جبکہ 9افراد بے ہوش ہو گئے ڈھوک بابا شیر خان نزد نوگزی داخلی چک بیلی خان میں خان محمد ملک کے گھر دوپہر کا کھانا پکا کھانا کھانے کے تھوڑی دیر بعد مکان بنانے کے لئے لگے ہوئے مستری جاوید کی حالت خراب ہونا شروع ہو گئی

گھرکا نوجوان بشارت اسے مقامی کلینک سے طبی امداد دلوانے کے بعد اس کے گاؤں لس ملائی چھوڑ آیا واپس آکر دیکھا تو گھر کے تمام افراد میں کچھ بے ہوش اور کچھ الٹی پیچش کے مرض میں مبتلا ہو چکے تھے بشارت فوراً گاڑی منگوا کر انھیں مقامی کلینک میں لے گیا کلینک میں پہنچتے ہی بشارت خود بھی بے ہوش ہو گیا

برادری کے لوگوں نے کلینک پہنچ کر متاثرین کو فوراً راولپنڈی ہسپتال لے جانا شروع کیا اسی اثنا میں سات سالہ بچی سدرہ وہیں بھی جان دے بیٹھی جبکہ باقی 9افراد محمد بشارت، قیصر عباس، اسد محمود، مفیدہ شاہین، منزہ خاتون، عجب عباس، رابعہ، عقیلہ بی بی اور جاوید کو پہلے ڈسٹرکٹ ہیڈ کوارزٹر ہسپتال راولپنڈی اور پھر حالت زیادہ تشویشناک ہونے پر ہولی فیملی ہسپتال راولپنڈی میں پہنچادیا گیا جہاں وہ زیرِ علاج ہیں اہلِ خانہ کا قیاس ہے کہ کھانے میں کوئی زہریلا کیڑا گرنے سے یہ واقعہ رونما ہونے کے امکانات ہیں

Chak Bale Khan, Gujar Khan; A Child dies while eating poisonous food in Chak Baile Khan, while 9 other people were left unconscious and taken to hospital in Rawalpindi.

The incident happened at the residence of Khan Mohammad Malik in village Dhok Baba Sher Khan, Nogazi in Chak Bale Khan. The family prepared lunch and as they finished lunch, they started to feel ill.

Builders who were working in the house along with family members were taken to hospital in emergency, Seven year old Sidra died while nine others are in hospital.

According to information their may be something fallen in cooking pot which may have caused the food poisoning.

یونین کونسل نڑالی کے گاؤں ڈہوک بدھال میں دو گروپس کے درمیان جھگڑے نے خوں ریز تصادم کی شکل اختیار کرلی

آتشیں اسلحہ سے فائرنگ ،تیز دھار آلات اور ڈنڈوں کا بے دریغ استعمال ،ایک شخص جاں بحق15سے زائد افراد زخمی

Village War in Narali, Gujar Khan, One dead 25 injured

some image

گوجرخان،دولتالہ؛ نمائندہ پوٹھوار ڈاٹ کوم، ،محمد نجیب جرال۔۔۔۔ دو گروپس کے درمیان خوں ریز تصادم ،آتشیں اسلحہ سے فائرنگ ،تیز دھار آلات اور ڈنڈوں کا بے دریغ استعمال ،ایک شخص جاں بحق15سے زائد افراد زخمی،علاقہ کی فضاء کشیدہ،خوف وہراس پھیل گیا

تفصیلات کے مطابق گزشتہ صبح نواحی گاؤں ڈہوک بدھال میں جابر نامی شخص کھیت میں ٹر یکٹر سے ہل چلا رہا تھا مخالف گروپ کے محمد اشفاق نے اس ایسا کرنے سے منع کیا جس سے دونوں میں تکرار شروع ہو گیا اشفاق نے 12 بور رائفل سے فائر کر دیا جو کہ سیدھا جابر کے سینے پر لگا جس کے نتیجے میں جابر ولد محمد الیاس سینے پر فائر لگنے سے موقع پر جان کی بازی ہار گیا اس کے بعد دو نوں گروپوں کے درمیان جھگڑے نے خون ریز تصادم کی شکل اختیار کرلی

جس میں آتشیں اسلحہ ،تیز دھار آلات اور ڈنڈوں کا بے دریغ استعمال کیا گیا جبکہ اسی گروپ کے زخمیوں میں زبیر اسلام ولد محمد الیاس،عمیر اسلام ولد محمد اسلام،محمد وقاص ولد محمد الیاس،شعیب اسلام ولد اظہر اعوان،محمد روحیل ولد محمد عارف،محمد ابراہیم ولد محمد شفیق،محمد سرفراز ولد غلام رسول ،محمد عرفات ولد محمد مشتاق،جبکہ دوسرے گروپ کے زخمیوں میں محمد امین الد امیر باز خان،محمد اشفاق ولد شہباز خان،رمضان یٰسین ولد محمد یٰسین،ابصار حسین ولد محمد حسین ،تفسیر الحق ولد محمد امین ،ضیاء الاسلام ولد عبدالرزاق ،نور الاسلام ولد عبدالرزاق شامل ہیں،تصادم کے بعد زخمیوں کو فوری طور دیہی مرکز صحت دولتالہ لایا گیا جہاں انہیں ابتدائی طبی امداد دیکر راولپنڈی ریفر کردیا گیا

جبکہ پولیس کی ایک کثیر نفری بمعہ افسران بھی موقع پر موجود تھے اور ضابطے کی کاروائی عمل میں لا رہی تھے،جاں بحق ہونے والے جابر کی نعش کو پوسٹمارٹم کیلئے گوجرخان بھیج دیا گیا ،واقع کے بعد علاقہ بھر بالخصوص ڈہوک بدھال کی فضاء انتہائی کشدہ ہو گئی جبکہ خوف وہراس کی لہر بھی چاروں جانب پھیل گئی تھانہ جاتلی پولیس نے دونوں گروپوں کے خلاف الگ الگ مقدمے در ج کر لیے ہیں

Narali, Gujar Khan ; A Long running feud between two rival groups in Dhok Badhal in Union council Narali has left one dead and 25 people being injured as fire arms and sticks were used by both groups in the row broken out.

According to Gujar Khan police who told pothwar.com that, Man named as Jabar was ploughing his field with his tractor in Dhok Badhal, when he was approached by rival group man named as Mohammad Ashfaq who told him to stop ploughing the tractor in the land, after that a row broke out.

Fire arms were used upon which Jabar was shot dead while 25 people from both groups were injured and taken to nearby Daultala health centre and serious cases were transferred to Rawalpindi.

Body of Jabar was handed back to the family after post mortem, Gujar Khan police have registered police case against both groups. The incident has left fearing for worst as local social and political personalities are urged to calm the situation and bring peace between the two rival groups.

Pothwar. COM

+44 7763249391 | pothwar@yahoo.co.uk
© Copyright Pothwar.com | Est. 2000-2017

new graphics